وہ جو خواب ہی رہا

0
32
Dreadful Dream - A Poem

وہ جو خواب ہی رہا
بس ایک صراب ہی رہا
ہم تھے اس انجمن کے انجان
اس ندی کا پانی شراب ہی رہا
مجھ میں نہیں تھے چال و چلن

محز مجھ میں اک باب ہی رہا
تھا وہ دن شفق کے انتظار میں
روح کو فقت عزاب ہی رہا
وقت بڈھاپے میں تقسیم ہونے کو ہے
تم میں فقت وہ شباب ہی رہا

Editor's Note

The Kashmir Pulse is now on Google News. Get latest news updates by subscribing to our Telegram handle or join our WhatsApp Group!

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here